Published On: Tue, Jul 18th, 2017

فا ٹا کے امن و استحکا م سے پر یشان القا ئدہ کی عوام کو گمر اہ کر نے کی نا کا م کو شش

فا ٹا کے امن و استحکا م سے پر یشان القا ئدہ کی عوام کو گمر اہ کر نے کی نا کا م کو شش

 سید ثاقب علی  شاہ

پاکستان کے غیو ر اور بہا در قوم میں فا ٹا کی عو ام انتہا ئی اہم  ہےمگربد قسمتی سے القائدہ ، تحریک طا لبا ن پا کستان اور دیگر دہشت گر د تنظیمو ں نے دہشت گر دانہ اقدا ما ت سے قبائلیوں  کے جا ن و ما ل کو بُر ی طر ح نقصان پہنچاکر امن و امان کو خر اب کر نے میں کو ئی  کسر نہیں چھوڑی ۔ فاٹا کی عوام کی بھر پو ر حما یت اور تعاون سے پا کستان کی مسلح افو اج نے ان دہشت گر د تنظیمو ں کے خلاف اہم کامیابیا ں حا صل کی ہیں ۔ پا ک فوج نے آپر یشن “ضرب عضب ” کے تحت فا ٹا کی سر زمین سے ہر  طرح کی دہشت گردی کے خاتمے کے لیے دہشت گرد وں کے تما م ٹھکا نو ں کو تہس نہس کر دیا جبکہ بھا گ کر سرحد پا ر چھپے دہشت گر د وں میں مسلح افواج کے خوف نے انہیں صرف چھپ کر پرو پیگنڈہ کر نے تک محد ود کر دیا ہے ۔ پا ک فو ج کی کا میا بیو ں کو منفی رنگ دینے اور عو ام کی ہمدردیاں حا صل کر نے کے لیے القا ئدہ بر صغیر کے ترجما ن اسا مہ محمو د  نے فا ٹا کی عوام پر پا ک فوج کے تشدد کی من گھڑت کہانیاں بنا کر عوام کو گمر اہ کر نے کی سا زشیں کی ہیں ۔ القا ئدہ کے دہشت گر د غیر ملکی دشمن خفیہ ایجنسیو ں کے تعاون اور دیگر دہشت گر د تنظیمو ں کے اتحا د سے فا ٹا میں قدم جما نا چاہتے ہیں ۔ یہ اس بات کی وا ضح نشا ند ہی ہے کہ دہشت گر دوں کی صفو ں میں انتہائی مایوسی اورخوف چھا یا ہے اور وہ بر اہ راست پاک فوج کا مقا بلہ کر نے سے کتر ا  رہے ہیں ۔

            گزشتہ کئی سالو ں  میں القا ئدہ ، تحریک طالبا ن پا کستان اور دیگر دہشت گر د تنظیمیں فا ٹا میں فرقہ ورانہ فسا دات اور دہشت گر د حملوں میں سر گر م رہی ہیں  ۔ ان دہشت گر دوں کے خلا ف پا ک فوج کے کا میا ب آپریشن کی وجہ سے  فاٹا کے لیے ۲۰۱۶ انتہائی  اہم ہے کیو ں کہ گزشتہ ایک دہا ئی میں دہشت گر د ی سے متعلق امو ات میں ریکا رڈ کمی آئی ہے۔ تازہ ترین  اعدا د و شما ر کے مطا بق فر وری ۲۰۱۷ تک فا ٹا میں تقر یبا ً ۲۵۶۳  دہشت گر د وا صل جہنم ہو ئے جبکہ پا ک فوج کے ۲۳۲ سپا ہیو ں نے جا م شہا دت نوش کیا ۔ گزشتہ سا لوں کی نسبت ۲۰۱۶ میں انسداد دہشت گردی کے آپر یشنز کی وجہ سے ایجنسی میں اموات کی شرح میں۷۷ فیصدکمی آئی ہے۔ ان مثبت نتا ئج کے ساتھ ساتھ آپر یشن “ردالفسا د ” کے آغاز کا مقصد تما م طر ح کی دہشت گر دی کا بلا امتیا ر خاتمہ اور سر حد وں کی حفا ظت ہے تا کہ  القا ئد ہ اور طالبا ن کےدہشت گر د دوبا رہ فا ٹا میں گھس کر دہشت گر دی سے با ز رہیں ۔۲۶ فر وری ۲۰۱۷ کو پا ک فو ج نے شما لی وزیرستان ایجنسی میں  سر حد پا ر سے حملہ آور دہشت گر دوں کا بھر پو ر مقا بلہ کر کے انہیں واپس پسپا ہو نے پر مجبو ر کیا جبکہ جنو بی وزیرستان کےگا ؤ ں  شیر انی اور دتہ خیل کے علا قے میں بھی ایسی ہی کاروائی کرکے بڑی تعداد  میں اسلحہ قبضے میں لیا ۔ ان دہشت گر دو ں کی نا کا می اور پسپا ئی نے انہیں اوچھے ہتھکنڈوں پر مجبور کر دیا ہے ۔

            فا ٹا کی عو ام کے دشمن یہ دہشت گر د اس شکست کے بعد لو گو ں کو گمر اہ کر نے کے لیے ہر ممکن کو شش کر رہے ہیں تا کہ قبا ئلی عوام  اپنا صدیو ں پر انا قبا ئلی طر ز زندگی بھول کر دہشت گردی کے آلہ کار بن جائیں ۔ القائدہ کے ترجما ن اسامہ محمود اور تحریک  طالبان کی سازشوں کا مقصد امن ، استحکا م اور  ترقی کو روک کر عد م استحکا م کو فر وغ دینا ہے تاکہ قبا ئلی عوام کو الگ تھلگ ، ان پڑھ اور جا ہل رکھ کر اپنا فا ئدہ حا صل کیا جا سکے ۔ پاک فو ج کے انسد اد دہشت گردی کے کا میا ب آپریشنز کی بد ولت جنو بی وزیرستان اور خیبر   ایجنسی کے قبا ئلی علا قوں سے دہشت گر دوں کا انحلا ءممکن ہو ا ہے اور حکومت بے گھر افر اد کی وا پسی اور آبادکاری کے لیے اقدا ما ت کر  رہی ہے ۔ فا ٹا کے مسا ئل کا حل ان دہشت گر د وں کی دہشت گر دی سے نہیں بلکہ عوام کو سیا سی حق رائے دہی دینے سے ہو گا ۔ جس فاٹا کی عو ام پر القائد ہ اور طالبا ن دہشت اور تشدد سے قا بض تھے ان کے لیے حکو مت ایک آزاد شہری کی حیثیت سے تما م حقوق کی فر اہمی کو یقینی بنانے کے لیے بھر پو ر  اقدامات کر رہی ہے ۔ فا ٹا کے لیے تشکیل دیئے گئے کمیشن نے فا ٹا کو خیبر پختونخواہ کے ساتھ ضم ہو نے یا علیحد ہ صوبہ بنا نے کی سفارشات کر کے فا ٹا کی عوام کے ساتھ مخلص اور ہمد رد ہو نے کا عملی ثبوت دیا ہے۔

            القائد ہ، طالبا ن اور داعش ہمیشہ مسلما ن مما لک کی عا م عوام کو اکسا نے کی کو شش کر تے رہےہیں ۔ تا ہم القا ئدہ بر صغیر کے ترجما ن کا پا ک فو ج کے متعلق فا ٹا کے لو گو ں با لخصو ص عو رتو ں سے بر ا سلو ک روا رکھنے کا الزا م بھی ان کی پر وپیگنڈا مہم کا تسلسل ہے ۔ در حقیقت یہ صر ف القا ئدہ اور اس  کے ساتھ منسلک دوسری دہشتگر د تنظیمیں ہیں جو پا کستان اور دیگر مسلم ممالک میں عورتو ں کے خلا ف منفی مہم چلانے ، ان  پر تشددکر نے اوران سے   ذیا دتی کی تر غیب دیتے ہیں ۔ جس اند از سے تحریک طا لبا ن پاکستان نے فا ٹا اور خیبر پختونخواہ کی عو رتو ں کو جہا د کے نا م پر دھمکا یا اور ظلم بر بریت کا نشا نہ بنا یا یہ ان دہشت گر دوں کی بیما رذہنیت اور دھوکہ دہی پر مبنی  نظریا ت کی اصل عکا سی ہے۔ یہ دہشت گر د فاٹا اور دیگر مسلما ن ممالک  میں مسلما ن عورتو ں کے اغواء ان سے زبر دستی شا دیو ں میں ملو ث ہیں ۔

            قبا ئلی علا قے جو پاک فو ج کی قا بل تحسین قربا نیو ں  کی بدولت دہشت گرد وں سے پا ک ہو ئے ہیں، ان علاقوں میں دہشت گردو ں نے عوام  کو دوبا رہ دھو کا دینے کے لیے پر وپیگنڈا مہم کا آغاز کر رکھا  ہے ۔ فا ٹا کے دہشت گر دی سے متا ثرہ علا قے حکومت اور  پا ک فو ج کی خصوصی تو جہ اور کا وشوں کی بدولت دوبا رہ  بحال ہو کر تر قی کر  رہے ہیں۔ ۲۵  نو مبر ۲۰۱۶ کو قبا ئلی علا قو ں کے لیے تشکیل دی گئی سینٹ کی قا ئمہ کمیٹی نے ایک خصوصی رپورٹ شا ئع کی ہے ۔ یہ خصوصی رپو رٹ ۲۰۱۷- ۲۰۱۶میں فاٹا کے سا لا نہ ترقیا تی منصو بہ جا ت پر مشتمل ہے جس میں فا ٹا کی مختلف ایجنسیوں میں نئی تعلیمی اور طبی سہولیا ت کی فر اہمی پر زور دیا گیا ہے ۔یہ ترقیا تی منصوبہ جا ت ۲۰۰۷ میں شروع کیے گئے تھےمگر دہشت گردوں کی پید ا کر دہ امن واما ن کی صورتحال کے با عث پا یہ تکمیل  تک نہ پہنچ سکے ۔ فا ٹا کی عو ام اپنی پا ک سر زمین سے ان دہشت گر دوں کے خاتمے کے لیے پر عز م اور پا ک فو ج کے ساتھ کھڑے ہیں۔ اس میں کو ئی شک نہیں کہ اس پاک مٹی کے بیٹوں نے فا ٹا کی عوام کو دہشت گردوں سے نجا ت دلا نے کے لیے بے مثال قربا نیا ں دیں اور فاٹا کے عوام نے مثا لی تعا ون کر کے پاکستانی تاریخ میں بڑے پیما نے پر اندرون ملک نقل مکا نی کی۔

            فا ٹا میں امن و استحکا م بحال ہو چکا ہے۔ پا ک فوج حکو مت کے ساتھ مل کر نقل مکا نی کر نے والو ں کی وا پسی کے لیے اور متاثرہ علا قوں کی  بحالی و تعمیر نو کے لیے بھر پو ر اقدا ما ت کر رہی ہے۔ القا ئدہ   اور تحریک طالبا ن ان علا قوں سے اپنا اثرورسوخ ختم ہو نے کی وجہ سے سخت  بر ہم ہیں اور لو گو ں کو دوبارہ غلام بنا نے کے لیے طر ح طرح کے پر وپیگنڈوں کا سہا را لے رہے ہیں ۔ جہا د اور شریعت کے نا م پرلو گو ں کو بے وقوف بنا نا، حکومت اور پا ک فو ج کے خلا ف اُ کسانا ان کے ذاتی مفا دات کو تقویت دیتا ہے ۔ اس مر حلے پر غفلت اور عدم تعاون نا صرف فاٹا کی قبا ئلی عوا م کے لیے ما یو س کُن ثابت ہو سکتی ہے بلکہ ان کے علا قوں میں عسکریت پسندی اور  دہشت گردی کے دوبا رہ شروع ہو نے کا بھی با عث بن سکتی ہے۔  القا ئدہ،  طا لبان او ردیگردہشت گرد گر وہ پاکستان دشمن عناصرسے ہر طر ح کی امدا د لے کر ان کے ایجنڈے پر کا م کر رہے ہیں ۔ اسی لیے یہ پا ک فوج کے خلاف اور قبا ئلی عوام کے استحصال کی من گھڑت کہانیا ں بنا کر معصو م عوام کی ہمدردیا ں حا صل کر نا چا ہتے ہیں۔ القا ئدہ تما م مسلم ممالک بشمو ل پاکستان میں کا لعدم قرا ر دی جا چکی ہے اور تمام ممالک اور مسالک کے جید علما ء اکر ام نے ان کے اور ان کی دہشت گردی کے خلاف فتوے جاری کر  رکھے ہیں ۔ تا ہم ان کے خلا ف پا کستان کے تما م تر اقدا مات قانونی اور انصاف پر مبنی ہیں ۔ فا ٹا کی عوام جہاد اور قبائلی غیر ت کے نا م پر القائدہ  کے گمراہ کن پر وپیگنڈے کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہیں اور قبا ئلی علا قوں سےدہشت گردوں کا مکمل خاتمہ ان کی اولین خواہش ہے ۔انہیں یہ بھر وسہ اور مان ہے کہ افواج پا کستان عنقریب قبائلی علا قوں کو دہشت گردی اور دہشت گردوں سے پا ک کر دیں گے ۔

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>